Sign in to follow this  
  • entries
    452
  • comments
    2
  • views
    32,875

جو مخالف تھے کبھی شہر میں دیوانوں کے

Sign in to follow this  
WaQaS DaR

438 views

جو مخالف تھے کبھی شہر میں دیوانوں کے
آج مہمان ہی لوگ ہیں ویرانوں کے

تم کو آنا ہے تو آ جاؤ، ابھی زندہ ہوں
پھول مرجھائے نہیں ہیں ابھی گلدانوں کے

شمع کو اور کوئی کام نہ تھا محفل میں
رات بھر پَر ہی جلاتی رہی پروانوں کے

ایک تہمت بھی اگر اور لگائی ہم پر
راز ہم کھول کے رکھ دیں گے شبستانوں کے

تجھ کو معلوم نہیں گیسوئے برہم کا مزاج
روگ تجھ کو بھی نہ لگ جائیں پریشانوں کے

 

15268059_1366509600056707_5996102445749015794_n.png

 


Click to View the full article (fundayforum.com)

Sign in to follow this  


0 Comments


Recommended Comments

There are no comments to display.

Create an account or sign in to comment

You need to be a member in order to leave a comment

Create an account

Sign up for a new account in our community. It's easy!

Register a new account

Sign in

Already have an account? Sign in here.

Sign In Now