Sign in to follow this  
  • entries
    438
  • comments
    2
  • views
    26,960

About this blog

Urdu shairy ki duniya. This blog has RSS of latest shairy o shairy topics from fundayforum.com.

If you are poetry lover please share here your fav poetry in comments. 

( Fundayforum.com)

fdwatermarkfd.png

Entries in this blog

 

ذی حالِ مستی مقم بہ رنجش 

ذی حالِ مستی مقم بہ رنجش 
بے حا لِ ھجراں بے چارا دل ھے
سنائی دیتی ہے جسکی دھڑکن
تمھارا دل یا ہمارا دل ہے
وہ آکے پہلو میں ایسے بیٹھے 
کہ شام رنگین ھو گئی ہے
ذرا ذرا سی کھلی طبیعت 
ذرا سی غمگین ہو گئ ہے
یہ شرم ہے یا حیا ہے کیا ہے؟؟؟
نظر اُٹھاتے ہی جھک گئی ہے 
تمہاری آنکھوں پہ گر کے شبنم
ہماری پلکوں پہ رک گئی ہے
عجیب ہیں دل کے زخم یارو
نہ ہوں تو مشکل ہے جینا اس کا
جو ہو تو ہر درد ایک ہیرا
ہر ایک غم ہے نگینہ اس کا 
سنائی دیتی ہے جسکی دھڑکن
تمھارا دل یا ہمارا دل ہے.... <3  
Click to View the full article (fundayforum.com)

WaQaS DaR

WaQaS DaR

 

جب تیری یاد کے بازار سے لگ جاتے ہیں

جب تیری یاد کے بازار سے لگ جاتے ہیں
ڈر کے ہم بھیڑ میں دیوار سے لگ جاتے ہیں 
ہجر کے پیڑ سے غم کا جو ثمر گرتا ہے
یوں تیری یاد کے انبار سے لگ جاتے ہیں
پہلے کیا کم تھے میری جاں پہ عذاب دم
کیا خبر تھی نئے آزار سے لگ جاتے ہیں
اک مدت ہوئی کہ وحشتوں کو جانا ہے
اب تو ہر سینہ حب یار سے لگ جاتے ہیں
آج ہم اپنی عداوت کو بھی یوں پرکھیں گے
آج دشمن کے گلے پیار سے لگ جاتے ہیں
جب مقدر میں ہی منزل نہ ہو تو ہم کو
دو قدم رستے بھی دشوار سے لگ جاتے ہیں
کاش مرہم ملے ہم کو کہیں ان زخموں کا
زخم جو اپنے کی گفتار سے لگ جاتے ہیں
ان کی تصویر کو سینے سے لگا کر مشعل
ہم تخیل میں گلے یار سے لگ جاتے ہیں 
جب تیری یاد کے بازار سے لگ جاتے ہیں
ڈر کے ہم بھیڑ میں دیوار سے لگ جاتے ہیں
View the full article

WaQaS DaR

WaQaS DaR

 

وه سلسلے وه شوق وه نسبت نهیں رهی

وه سلسلے وه شوق وه نسبت نهیں رهی
اب زندگی میں هجر کی وحشت نهیں رهی
ٹوٹا هے جب سے اسکی مسیحائی کا طلسم
دل کو کسی مسیحا کی حاجت نهیں رهی
پهر یوں هوا که کوئی شناسا نهیں رها
پهر یوں هوا که درد میں شدت نهیں رهی
پهر یوں هوا که هو گیا مصروف وه بهت
اور هم کو یاد کرنے کی فرصت نهیں رهی
اب کیا کسی کو چاهیں که هم کو تو ان دنوں
خود اپنے آپ سے بهی محبت نهیں رهی  
View the full article

WaQaS DaR

WaQaS DaR

 

ﺍﮔﺮ ﮐﺒﮭﯽ ﻣﯿﺮﯼ ﯾﺎﺩ ﺍﺋﮯ

ﺍﮔﺮ ﮐﺒﮭﯽ ﻣﯿﺮﯼ ﯾﺎﺩ ﺍﺋﮯ
ﺗﻮ ﭼﺎﻧﺪ ﺭﺍﺗﻮﮞ ﮐﯽ ﺭﻭﺷﻨﯽ ﻣﯿﮟ
ﮐِﺴﯽ ﺳﺘﺎﺭﮮ ﮐﻮ ﺩﯾﮑﮫ ﻟﯿﻨﺎ ﺍﮔﺮ ﻭﮦ ﻧﺨﻞِ ﻓﻠﮏ ﺳﮯ ﺍُﮌ ﮐﺮ 
ﺗﻤﮩﺎﺭﮮ ﻗﺪﻣﻮﮞ ﻣﯿﮟ ﺁ ﮔِﺮﮮ ﺗﻮ
ﯾﮧ ﺟﺎﻥ ﻟﯿﻨﺎ ﻭﮦ ﺍﺳﺘﻌﺎﺭﮦ ﺗﮭﺎ ﻣﯿﺮﮮ ﺩِﻝ ﮐﺎ ﺍﮔﺮ ﻧﮧ ﺁﺋﮯ ﻣﮕﺮ ﯾﮧ ﻣﻤﮑﻦ ﮨﯽ ﮐِﺲ ﻃﺮﺡ ﮨﮯ
ﮐﮧ ﺗﻢ ﮐِﺴﯽ ﭘﺮ ﻧﮕﺎﮦ ﮈﺍﻟﻮ
ﺗﻮ ﺍُﺱ ﮐﯽ ﺩﯾﻮﺍﺭِ ﺟﺎﮞ ﻧﮧ ﭨﻮﭨﮯ
ﻭﮦ ﺍﭘﻨﯽ ﮨﺴﺘﯽ ﻧﮧ ﺑﮭﻮﻝ ﺟﺎﺋﮯ
,
ﺍﮔﺮ ﮐﺒﮭﯽ ﻣﯿﺮﯼ ﯾﺎﺩﺁﺋﮯ
ﮔﺮﯾﺰ ﮐﺮﺗﯽ ﮨﻮﺍ ﮐﯽ ﻟﮩﺮﻭﮞ ﭘﮧ ﮨﺎﺗﮫ ﺭﮐﮭﻨﺎ
ﻣﯿﮟ ﺧﻮﺷﺒﻮﺋﻮﮞ ﻣﯿﮟ ﺗﻤﮩﯿﮟ ﻣِﻠﻮﮞ ﮔﺎ ﻣﺠﮭﮯ ﮔﻼﺑﻮﮞ ﮐﯽ ﭘﺘﯿﻮﮞ ﻣﯿﮟ ﺗﻼﺵ ﮐﺮﻧﺎ
ﻣﯿﮟ ﺍَﻭﺱ ﻗﻄﺮﻭﮞ ﮐﮯ ﺁﺋﯿﻨﻮﮞ ﻣﯿﮟ ﺗﻤﮩﯿﮟ ﻣِﻠﻮﮞ ﮔﺎ
,
ﺍﮔﺮ ﺳﺘﺎﺭﻭﮞ ﻣﯿﮟ، ﺍﻭﺱ ﻗﻄﺮﻭﮞ ﻣﯿﮟ ، ﺧﻮﺷﺒﻮﺋﻮﮞ
ﻣﯿﮟ ﻧﮧ ﭘﺎﺋﻮ ﻣﺠﮫ ﮐﻮ ﺗﻮ ﺍﭘﻨﮯ ﻗﺪﻣﻮﮞ ﻣﯿﮟ ﺩﯾﮑﮫ ﻟﯿﻨﺎ ﻣﯿﮟ ﮔﺮﺩ ﮨﻮﺗﯽ ﻣﺴﺎﻓﺘﻮﮞ ﻣﯿﮟ ﺗﻤﮩﯿﮟ ﻣِﻠﻮﮞ ﮔﺎ ﮐﮩﯿﮟ ﭘﮧ ﺭﻭﺷﻦ ﭼﺮﺍﻍ ﺩﯾﮑﮭﻮ ﺗﻮ ﺟﺎﻥ ﻟﯿﻨﺎ
ﮐﮧ ﮨﺮ ﭘﺘﻨﮕﮯ ﮐﮯ ﺳﺎﺗﮫ ﻣﯿﮟ ﺑﮭﯽ ﺑِﮑﮭﺮ ﭼُﮑﺎ ﮨﻮﮞ ﺗﻢ ﺍﭘﻨﮯ ﮨﺎﺗﮭﻮﮞ ﺳﮯ ﺍُﻥ ﭘﺘﻨﮕﻮﮞ ﮐﯽ ﺧﺎﮎ ﺩﺭﯾﺎ ﻣﯿﮟ
ﮈﺍﻝ ﺩﯾﻨﺎ ﻣﯿﮟ ﺧﺎﮎ ﺑﻦ ﮐﺮ ﺳﻤﻨﺪﺭﻭﮞ ﻣﯿﮟ ﺳﻔﺮ ﮐﺮﻭﮞ ﮔﺎ ﮐِﺴﯽ ﻧﮧ ﺩﯾﮑﮭﮯ ﮨﻮﺋﮯ ﺟﺰﯾﺮﮮ ﭘﮧ ﺭُﮎ ﮐﮯ ﺗﻢ ﮐﻮ
ﺻﺪﺍﺋﯿﮟ ﺩﻭﮞ ﮔﺎ ﺳﻤﻨﺪﺭﻭﮞ ﮐﮯ ﺳﻔﺮ ﭘﮧ ﻧﮑﻠﻮ ﺗﻮ ﺍُﺱ ﺟﺰﯾﺮﮮ ﭘﮧ ﺑﮭﯽ
ﺍُﺗﺮﻧﺎ *_ﺍﮔﺮ ﮐﺒﮭﯽ ﻣﯿﺮﯼ ﯾﺎﺩ ﺁﺋﮯ۔۔*  
View the full article

WaQaS DaR

WaQaS DaR

 

تجھ سے بچھڑوں تو تری ذات کا حصہ ہو جاؤں

تجھ سے بچھڑوں تو تری ذات کا حصہ ہو جاؤں
جس سے مرتا ہوں اسی زہر سے اچھا ہو جاؤں تم مرے ساتھ ہو یہ سچ تو نہیں ہے لیکن
میں اگر جھوٹ نہ بولوں تو اکیلا ہو جاؤں میں تری قید کو تسلیم تو کرتا ہوں مگر
یہ مرے بس میں نہیں ہے کہ پرندہ ہو جاؤں آدمی بن کے بھٹکنے میں ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔مزا آتا ہے
میں نے سوچا ہی نہیں تھا کہ فرشتہ ہو جاؤں وہ تو اندر کی اداسی نے بچایا۔۔۔۔۔۔۔ورنہ
ان کی مرضی تو یہی تھی کہ شگفتہ ہو جاؤں احمد کمال پروازی  
View the full article

WaQaS DaR

WaQaS DaR

 

یہ خوش نظری خوش نظر آنے کے لئے ہے 

یہ خوش نظری خوش نظر آنے کے لئے ہے 
اندر کی اداسی کو چھپانے کے لئے ہے میں ساتھ کسی کے بھی سہی ، پاس ہوں تیرے
سب دربدری ایک ٹھکانے کے لئے ہے ٹوٹے ہوئے خوابوں سے اٹھائی ہوئی دیوار
اِک آخری سپنے کو بچانے کے لئے ہے اس راہ پہ اک عمر گزر آئے تو دیکھا
یہ راہ فقط لوٹ کے جانے کے لئے ہے رہ رہ کے کوئی خاک اڑا جاتا ہے مجھ میں
کیا دشت ہے اور کیسے دِوانے کے لئے ہے تجھ کو نہیں معلوم کہ میں جان چکا ہوں 
تو ساتھ فقط ساتھ نبھانے کے لئے ہے تو نسلِ ہوا سے ہے بھلا تجھ کو خبر کیا 
وہ دکھ جو چراغوں کے گھرانے کے لئے ہے ( سعود عثمانی)  
View the full article

WaQaS DaR

WaQaS DaR

 

ﺍُﭨﮫ ﺷﺎﮦ ﺣُﺴﯿﻨﺎ ﻭﯾﮑﮫ ﻟﮯ ﺍﺳّﯽ ﺑﺪﻟﯽ ﺑﯿﭩﮭﮯ ﺑﮭﯿﺲ

ﺍُﭨﮫ ﺷﺎﮦ ﺣُﺴﯿﻨﺎ ﻭﯾﮑﮫ ﻟﮯ ﺍﺳّﯽ ﺑﺪﻟﯽ ﺑﯿﭩﮭﮯ ﺑﮭﯿﺲ
ﺳﺎﮈﯼ ﺟِﻨﺪ ﻧﻤﺎﻧﯽ ﮐُﻮﮐﺪﯼ ﺍﺳﯽ ﺭُﻝّ ﮔﺌﮯ ﻭِﭺّ ﭘﺮﺩﯾﺲ
ﺳﺎﮈﺍ ﮨﺮ ﺩﻡ ﺟﯽ ﮐُﺮﻻﻭﻧﺪﺍ ، ﺳﺎﮈﯼ ﻧِﯿﺮ ﻭﮔﺎﻭﮮ ﺍَﮐّﮫ
ﺍﺳﺎﮞ ﺟﯿﻮﻧﺪﯼ ﺟﺎﻧﺪﮮ ﻣﺮ ﮔﺌﮯ، ﺳﺎﮈﺍ ﻣﺎﺩﮬﻮ ﮨﻮﯾﺎ ﻭﮐﮫ
ﺳﺎﻧﻮﮞ ﺳﭗّ ﺳﻤﮯ ﺩﺍ ﮈﻧّﮕﺪﺍ ، ﺳﺎﻧﻮﮞ ﭘَﻞ ﭘَﻞ ﭼﮍﮬﺪﺍ ﺯﮨﺮ
ﺳﺎﮬﮉﮮ ﺍﻧﺪﺭ ﺑﯿﻠﮯ ﺧﻮﻑ ﺩﮮ ، ﺳﺎﮬﮉﮮ ﺟﻨﮕﻞ ﺑﻦ ﮔﺌﮯ ﺷﮩﺮ
ﺍﺳﺎﮞ ﺷﻮﮦ ﻏﻤﺎﮞ ﻭِﭺ ﮈُﺑﺪﮮ، ﺳﺎﮬﮉﯼ ﺭُﮌﮪ ﮔﺌﯽ ﻧﺎﺋﻮ ﭘﺘﻮﺍﺭ
ﺳﺎﮬﮉﮮ ﺑﻮﻟﻦّ ﺗﮯ ﭘﺎﺑﻨﺪﯾﺎﮞ ، ﺳﺎﮬﮉﮮ ﺳﺮ ﻟﭩﮑﮯ ﺗﻠﻮﺍﺭ
ﺍﺳﺎﮞ ﻧﯿﻨﺎﮞ ﺩﮮ ﮐﮭﻮﮦ ﮔِﯿﮍ ﮐﮯ ﮐِﯿﺘﯽ ﻭﺗّﺮ ﺩﻝ ﺩﯼ ﭘَﺌﻮﮞ
ﺍﯾﮩﮫ ﺑﻨﺠﺮ ﺭﮬﺌﯽ ﻧﻤﺎﻧﻨﮍﯼ ، ﺳﺎﻧﻮﮞ ﺳﺠّﻦ ﺗﯿﺮﯼ ﺳَﻮﻧﮫ
ﺍﺳﺎﮞ ﺍُﺗﻮﮞ ﺷﺎﻧﺖ ﺟﺎﭘﺪﮮ، ﺳﺎﮬﮉﮮ ﺍﻧﺪﺭ ﻟﮕﯽ ﺟﻨﮓ
ﺳﺎﻧﻮﮞ ﭼُﭗ ﭼﭙﯿﺘﺎ ﻭﯾﮑﮫ ﮐﮯ ، ﭘﺌﮯ ﺍﮐﮭﻦ ﻟﻮﮎ ﻣﻠﻨﮓ
ﺍﺳﺎﮞ ﮐُﮭﺒﮯ ﻏﻢ ﺩﮮ ﮐُﮭﺒﮍﮮ ، ﺳﺎﮈﮮ ﻟﻤﮯ ﮨﻮ ﮔﺌﮯ ﮐﯿﺲ
ﭘﺎ ﺗﺎﻧﮯ ﺑﺎﻧﮯ ﺳﻮﭼﺪﮮ، ﺍﺳﺎﮞ ﺑُﻨﺪﮮ ﺭﯾﻨﺪﮮ ﮐﮭﯿﺲ  
View the full article

WaQaS DaR

WaQaS DaR

 

بِن تِرے،

بِن تِرے، کائنات کا منظر
اِک دسمبر کی شام ہو جیسے درد ٹھہرا ہے آ کے یُوں دل میں
عمر بھر کا قیام ہو جیسے خاک بیٹھی ہے خاک پر دیکھو!
کوئی عالی مقام ہو جیسے اُن کی ہر بات پر "بجا" بولے
دل بھی ذہنی غلام ہو جیسے  
View the full article

WaQaS DaR

WaQaS DaR

 

هم نے کاٹی هیں تری یاد میں راتیں اکثر

هم نے کاٹی هیں تری یاد میں راتیں اکثر
دل سے گزری هیں ستاروں کی باراتیں اکثر عشق رهزن نه سهی‘عشق کے هاتھوں پھر بھی
هم نے لٹتی هوئی دیکھی هیں براتیں اکثر هم سے اک بار بھی نه جیتا هے نه جیتے گا کوئی
وه تو هم جان کے کھا لیتے هیں ماتیں اکثر ان سے پوچھو کبھی چهرے بھی پڑھے هیں تم نے
جو کتابوں کی کیا کرتے هیں باتیں اکثر حال کهنا هو کسی سے تو مخاطب هے کوئی
کتنی دلچسپ هوا کرتی هیں باتیں اکثر اور تو کون هے جو مجھ کو تسلی دیتا
هاتھ رکھ دیتی هیں دل پر تری باتیں اکثر  
View the full article

WaQaS DaR

WaQaS DaR

 

فقط اسكو هی

!  ﻓﻘﻂ ﺍُﺳﮑﻮ ﮨﯽ ﻣﺎﻧﮕﺎ ﺗﮭﺎ ﺧﺪﺍﯾﺎ
ﮐﻮﺋﯽ ﮬﻢ ﻧﮯ ﺧﺪﺍﺋﯽ ﻣﺎﻧﮓ ﻟﯽ ﺗﮭﯽ؟
-
ﮐﮩﺎ ﯾﮧ ﻭﺻﻞ ﮐﯽ ﺳﻮﻏﺎﺕ ﺗﯿﺮﯼ
ﻣﮕﺮ ﺍُﺱ ﻧﮯ ﺟُﺪﺍﺋﯽ ﻣﺎﻧﮓ ﻟﯽ ﺗﮭﯽ
-
ﻣﺰﺍﺝ ﺍﭘﻨﺎ ﺑﮭﯽ ﺗﮭﺎ ﺑﯿﺰﺍﺭ ـــ ﺍِﺱ ﭘﺮ
ﮐﺴﯽ ﻧﮯ ﮐﺞ ﺍﺩﺍﺋﯽ ﻣﺎﻧﮓ ﻟﯽ ﺗﮭﯽ
-
ﺯﺑﺎﮞ ﭘﺮ ﺍُﺱ ﮐﮯ ﺗﺎﻟﮯ ﺗﮭﮯ ﮐﺴﯽ ﻧﮯ
ﻣﺮﮮ ﺣﻖ ﻣﯿﮟ ﮔﻮﺍﺋﯽ ﻣﺎﻧﮓ ﻟﯽ ﺗﮭﯽ
-
ﻭﮦ ﮐﺎﻧﭩﻮﮞ ﻣﯿﮟ ﮨﯽ ﺍُﻟﺠﮭﺎ ﺟﺎ ﺭﮨﺎ ﺗﮭﺎ
ﮔُﻠﻮﮞ ﺳﮯ ﺁﺷﻨﺎﺋﯽ ﻣﺎﻧﮓ ﻟﯽ ﺗﮭﯽ
-
ﮨﻤﯿﮟ ﺑﮯﻣﻮﺕ ﻣﺮﻧﺎ ﭘﮍ ﮔﯿﺎ ﮬﮯ
ﮐﺴﯽ ﮐﯽ ﻣﻮﺕ ﺁﺋﯽ ﻣﺎﻧﮓ ﻟﯽ ﺗﮭﯽ
-
ﺍُﺳﮯ ﺍﺷﮑﻮﮞ ﮐﯽ ﺩﻭﻟﺖ ﺩﮮ ﭼُﮑﮯ ﮨﯿﮟ
ﮐﮧ ﺍُﺱ ﻧﮯ ﮐُﻞ ﮐﻤﺎﺋﯽ ﻣﺎﻧﮓ ﻟﯽ ﺗﮭﯽ
-
ﺑﺘﻮﻝ ! ﺍﭼﮭﺎ ﻧﮩﯿﮟ ﺗﮭﺎ ﻋﺸﻖ ﮐﺎﻓﺮ
ﮨﻤﮩﯽ ﻧﮯ ﺟﮓ ﮨﻨﺴﺎﺋﯽ ﻣﺎﻧﮓ ﻟﯽ ﺗﮭﯽ؟
-
View the full article

WaQaS DaR

WaQaS DaR

 

چمن کاغز ثه جو دل

چمن کاغذ پہ جو دل کا ــــ بناؤں تو خریدو گے نہ خوشبو ، پھول ، تتلی کو دیکھاؤں تو خریدو گے ۔
 رواں ہے زندگی میری سمجھتے ہیں سبھی لیکن پڑی ہے عمر الماری میں ــــ لاؤں تو خریدو گے  یہاں تو دشت میں یادیں بہت پنہاں پرندوں کی فقط اک پیڑ منظر سے ـــــــ ہٹاؤں تو خریدو گے  سُنا ہے عقل والوں کے یہاں پر نرخ کچھ کم ہیں کہو تم جو خریدارو، میں آؤں تو خریدو گے ۔
 سرِ بازار آیا ہوں کرو سودا اَرے صاحب بہت ویران دنیا ہے ، سجاؤں تو خریدو گے....!!!!
View the full article

WaQaS DaR

WaQaS DaR

 

وہ محبتیں مجھےچاھئیں

میری روح میں جو اُتر سکیں
وہ محبتیں مجھےچاھئیں
جو سراب ھوں نہ عذاب ھوں
وہ رفاقتیں مجھے چاھئیں انہیں ساعتوں کی تلاش ھے
جو کیلینڈروں سے اتر گئیں
جو سمئے کے ساتھ گزر گئیں
وھی فرصتیں مجھے چاھئیں کہیں مِل سکے تو سمیٹ لا
میری روز و شب کی کہانیاں
جو غبارِ وقت میں چُھپ گئیں
وہ حکایتیں مجھے چاھئیں جو میری شبوں کے چراغ تھے
وھی میری امید کے باغ تھے
وھی لوگ ھیں میری آرزو
وھی صُورتیں مجھے چاھئیں تیری قربتیں نہیں چاھئیں
میری شاعری کے مزاج کو
مجھے فاصلوں سے دوام دے
تیری فرقتیں مجھے چاھئیں مجھے اور کچھ نہیں چاھیے
یہ دعائیں ھے میرا سائبان
کڑی دھوپ میں جو مل سکیں
تو یہی چھتیں مجھے چاھئیں ”اعتبار ساجد“  
Click to View the full article (fundayforum.com)

WaQaS DaR

WaQaS DaR

 

Share Your Favorite poetry Here

ﮐﺒﮭﯽ ﯾﺎﺩ ﺁﺅ ﺗﻮ ﺍﺱ ﻃﺮﺡﮐﮧ ﻟﮩﻮ ﮐﯽ ﺳﺎﺭﯼ ﺗﻤﺎﺯﺗﯿﮟ ﺗﻤﮩﯿﮟ ﺩﮬﻮﭖ ﺩﮬﻮﭖ ﺳﻤﯿﭧ ﻟﯿﮟ ﺗﻤﮩﮟ ﺭﻧﮓ ﺭﻧﮓ ﻧﮑﮭﺎﺭ ﺩﯾﮟ ﺗﻤﮩﯿﮟ ﺣﺮﻑ ﺣﺮﻑ ﻣﯿﮟ ﺳﻮﭺ ﻟﯿﮟ ﺗﻤﮩﯿﮟ ﺩﯾﮑﮭﻨﮯ ﮐﺎ ﺟﻮ ﺷﻮﻕ ﮨﻮ ﺗﻮ ﺩﯾﺎﺭِ ﮨﺠﺮ ﮐﯽ ﺗﯿﺮﮔﯽ ﮐﻮ ﻣﮋﮦ ﮐﯽ ﻧﻮﮎ ﺳﮯ ﻧﻮﭺ ﻟﯿﮟ ﮐﺒﮭﯽ ﯾﺎﺩ ﺁﺅ ﺗﻮ ﺍﺱ ﻃﺮﺡ ﮐﮧ ﺩﻝ ﻭ ﻧﻈﺮ ﻣﯿﮟ ﺍُﺗﺮ ﺳﮑﻮ ﮐﺒﮭﯽ ﺣﺪ ﺳﮯ ﺣﺒﺲِ ﺟﻨﻮﮞ ﺑﮍﮬﮯ ﺗﻮ ﺣﻮﺍﺱ ﺑﻦ ﮐﮯ ﺑﮑﮭﺮ ﺳﮑﻮ ﮐﺒﮭﯽ ﮐِﮭﻞ ﺳﮑﻮ ﺷﺐِ ﻭﺻﻞ ﻣﯿﮟ ﮐﺒﮭﯽ ﺧﻮﻥِ ﺟﮕﺮ ﻣﯿﮟ ﺳﻨﻮﺭ ﺳﮑﻮ ﺳﺮِ ﺭﮨﮕﺰﺭ ﺟﻮ ﻣﻠﻮ ﮐﺒﮭﯽ ﻧﮧ ﭨﮭﮩﺮ ﺳﮑﻮ ﻧﮧ ﮔﺰﺭ ﺳﮑﻮ ﻣﺮﺍ ﺩﺭﺩ ﭘﮭﺮ ﺳﮯ ﻏﺰﻝ ﺑﻨﮯ ﮐﺒﮭﯽ ﮔﻨﮕﻨﺎﺅ ﺗﻮ ﺍﺱ ﻃﺮﺡ ﻣﺮﮮ ﺯﺧﻢ ﭘﮭﺮ ﺳﮯ ﮔﻼﺏ ﮨﻮﮞ ﮐﺒﮭﯽ ﻣﺴﮑﺮﺍﺅ ﺗﻮ ﺍﺱ ﻃﺮﺡ ﻣﺮﯼ ﺩﮬﮍﮐﻨﯿﮟ ﺑﮭﯽ ﻟﺮﺯ ﺍﭨﮭﯿﮟ ﮐﺒﮭﯽ ﭼﻮﭦ ﮐﮭﺎﺅ ﺗﻮ ﺍﺱ ﻃﺮﺡ ﺟﻮ ﻧﮩﯿﮟ ﺗﻮ ﭘﮭﺮ ﺑﮍﮮ ﺷﻮﻕ ﺳﮯ ﺳﺒﮭﯽ ﺭﺍﺑﻄﮯ ﺳﺒﮭﯽ ﺿﺎﺑﻄﮯ ﮐﺴﯽ ﺩﮬﻮﭖ ﭼﮭﺎﺅﮞ ﻣﯿﮟ ﺗﻮﮌ ﺩﻭ ﻧﮧ ﺷﮑﺴﺖِ ﺩﻝ ﮐﺎ ﺳﺘﻢ ﺳﮩﻮ ﻧﮧ ﺳﻨﻮ ﮐﺴﯽ ﮐﺎ ﻋﺬﺍﺏِ ﺟﺎﮞ ﻧﮧ ﮐﺴﯽ ﺳﮯ ﺍﭘﻨﯽ ﺧﻠﺶ ﮐﮩﻮ ﯾﻮﻧﮩﯽ ﺧﻮﺵ ﭘﮭﺮﻭ، ﯾﻮﻧﮩﯽ ﺧﻮﺵ ﺭﮨﻮ ﻧﮧ ﺍُﺟﮍ ﺳﮑﯿﮟ ، ﻧﮧ ﺳﻨﻮﺭ ﺳﮑﯿﮟ ﮐﺒﮭﯽ ﺩﻝ ﺩُﮐﮭﺎﺅ ﺗﻮ ﺍﺱ ﻃﺮﺡ ﻧﮧ ﺳﻤﭧ ﺳﮑﯿﮟ ، ﻧﮧ ﺑﮑﮭﺮ ﺳﮑﯿﮟ ﮐﺒﮭﯽ ﺑﮭﻮﻝ ﺟﺎﺅ ﺗﻮ ﺍﺱ ﻃﺮﺡ ﮐﺴﯽ ﻃﻮﺭ ﺟﺎﮞ ﺳﮯ ﮔﺰﺭ ﺳﮑﯿﮟ ﮐﺒﮭﯽ ﯾﺎﺩ ﺁﺅ ﺗﻮ ﺍﺱ ﻃﺮﺡ !!  
Click to View the full article (fundayforum.com)

WaQaS DaR

WaQaS DaR

 

یہی وفا کا صلہ ہے تو کوئی بات نہیں

یہی وفا کا صلہ ہے تو کوئی بات نہیں
یہ درد تو نے دیا ہے تو کوئی بات نہیں
یہی بہت ہے کہ تم دیکھتی ہو ساحل سے
کہ سفینہ ڈوب رہا ہے تو کوئی بات نہیں
رکھا تھا آئینہ دل میں چھپا کے تم کو
وہ گھر چھوڑ دیا ہے تو کوئی بات نہیں
تم نے ہی آئینہ دل میرا بنایا تھا
تم نے ہی توڑ دیا ہے تو کوئی بات نہیں
بالآخر زیست کے قابل بنا ہوں میں
بڑی مشکل سے پتھر دل بنا ہوں میں
وہ آئے ہیں سراپائے مجسم بن کر
میں گھبرا کر مجسمہ دل بنا ہوں
جہاں مقتول ہی ٹھہرے ہیں مجرم
یہی کچھ سوچ  کے قاتل بنا ہوں میں 
بڑا محتاط ہوں تیری محفل میں 
 تیری جانب سے سو غافل بنا ہوں میں
میں کھا کر ٹھوکریں تیری گلیوں کی 
بڑا مرشد بڑا کامل بنا ہوں میں
کوئی سمجھے گا کیا مجھ کو
خود اپنے لیے مشکل بنا ہوں میں
یہی وفا کا صلہ ہے تو کوئی بات نہیں 
یہ درد تو نے دیا ہے تو کوئی بات نہیں
 
Click to View the full article (fundayforum.com)

WaQaS DaR

WaQaS DaR

 

Urdu Poetry Collection On Eyes

روگ دل کو لگا گئیں آنکھیں 
اک تماشا دکھا گئیں آنکھیں 

مل کے ان کی نگاہ جادو سے 
دل کو حیراں بنا گئیں آنکھیں 

مجھ کو دکھلا کے راہ کوچہء یار 
کس غضب میں پھنسا گئیں آنکھیں 

اس نے دیکھا تھا کس نظر سے مجھے 
دل میں گویا سما گئیں آنکھیں 

محفل یار میں بہ ذوق نگاہ 
لطف کیا کیا اٹھا گئیں آنکھیں 

حال سنتے وہ میرا کیا حسرت 
وہ تو کہئے سنا گئیں آنکھیں     
Click to View the full article (fundayforum.com)

WaQaS DaR

WaQaS DaR

 

Aankhon ka rang baat ka lehja

Aankhon ka rang baat ka lehja badal giya,
Woh shakhs ek raat main kitna badal giya,
Qadmon talay jo rait bichi thi woh chal pari,
Us nay churaya haath to sehra badal giya,
Koi bhi cheez apni jagah par nahen rahi,
Jatay hi ek shakhs k kiya kiya badal giya,
Hairat say saray lafz usay dekhtay rahay,
Baaton main apni baat ko kaisay badal giya,
Shayad wafa k khail say ukta gaya tha woh,
Manzil k pass aa k jo rasta badal gya.
Click to View the full article (fundayforum.com)

WaQaS DaR

WaQaS DaR

 

جس کا انکار بھی انکار نہ سمجھا جائے

جس کا انکار بھی انکار نہ سمجھا جائے
ہم سے وہ یارِطرحدار نہ سمجھا جائے
اتنی کاوش بھی نہ کر میری اسیری کے لیے
تو کہیں میرا گرفتار نہ سمجھا جائے
اب جو ٹھہری ہے ملاقات تو اس شرط کے ساتھ شوق کو درخورِ اظہار نہ سمجھا جائے
نالہ بلبل کا جو سنتا ہے تو کھل اُٹھتا ہے گل
عشق کو مفت کی بیگار نہ سمجھا جائے
عشق کو شاد کرے غم کا مقدر بدلے
حسن کو اتنا بھی مختار نہ سمجھا جائے بڑھ چلا آج بہت حد سے جنونِ گستاخ  
اب کہیں اس سے سرِ دار نہ سمجھا جائے
دل کے لینے سے علی اُس کو نہیں ہے انکار
لیکن اس طرح کہ اقرار نہ سمجھا جائے
Click to View the full article (fundayforum.com)

WaQaS DaR

WaQaS DaR

 

Mohabbat ki talash

مجھے آنسوؤں کی طلب نہیں مجھے زندگی کی تلاش ھے جسے ڈھونڈ کر بھی نہ پا سکا مجھے پھر اسی کی تلاش ہے مجھے دشمنوں میں نہ ڈھونڈنا مجھے دوستوں میں تلاشنا میں محبّتوں کا سفیر ہوں مجھے دوستی کی تلاش ہے میری راہ عزم تلاش میں کوئ زندگی کا رفیق ہو کو ئ آنسو ؤ ں کا چراغ دے مجھے رو شنی کی تلاش ہے میں بلند یو ں کا ضمیر ہوں میں رفا قتو ں کا پزیر ہوں مجھے نفرتوں کی زمین پر محبّتو ں کی تلاش ہے  
Click to View the full article (fundayforum.com)

WaQaS DaR

WaQaS DaR

 

Aa mare khawab...

ﺍﮮ ﻣﯿﺮﮮ ﺧﻮﺍﺏ ﺁ ، ﻣِﺮﯼ ﺁﻧﮑﮭﻮﮞ ﮐﻮ ﺭﻧﮓ ﺩﮮ
ﺍﮮ ﻣﯿﺮﯼ ﺭﻭﺷﻨﯽ ، ﺗﻮُ ﻣﺠﮭﮯ ﺭﺍﺳﺘﺎ ﺩِﮐﮭﺎ
ﺍﺏ ﺁ ﺑﮭﯽ ﺟﺎ ﮐﮧ , ﺻُﺒﺢ ﺳﮯ ﭘﮩﻠﮯ ﮬﯽ ﺑُﺠﮫ ﻧﮧ ﺟﺎﺅﮞ
ﺍﮮ ﻣﯿﺮﮮ ﺁﻓﺘﺎﺏ ، ﺑﮩﺖ ﺗﯿﺰ ﮬﮯ ﮬَﻮﺍ
ﯾﺎ ﺭﺏ ! ﻋﻄﺎ ﮬﻮ ﺯﺧﻢ ﮐﻮﺋﯽ ﺷﻌﺮ ﺁﻓﺮﯾﮟ
ﺍِﮎ ﻋُﻤﺮ ﮬﻮ ﮔﺌﯽ , ﮐﮧ ﻣِﺮﺍ ﺩﻝ ﻧﮩﯿﮟ ﺩُﮐﮭﺎ
ﻭﮦ ﺩَﻭﺭ ﺁ ﮔﯿﺎ ﮬﮯ ﮐﮧ ﺍﺏ ﺻﺎﺣﺒﺎﻥِ ﺩﺭﺩ
ﺟﻮ ﺧﻮﺍﺏ ﺩﯾﮑﮭﺘﮯ ﮬﯿﮟ ، ﻭﮬﯽ ﺧﻮﺍﺏ ﻧﺎﺭﺳﺎ
ﺩﺍﻣﻦ ﺑَﻨﮯ ، ﺗﻮ ﺭﻧﮓ ﮬُﻮﺍ ﺩﺳﺘﺮﺱ ﺳﮯ ﺩُﻭﺭ
ﻣﻮﺝِ ﮬَﻮﺍ ﮬُﻮﺋﮯ ، ﺗﻮ ﮬﮯ ﺧﻮُﺷﺒﻮ ﮔﺮﯾﺰ ﭘﺎ
ﻟﮑﮭﯿﮟ ﺑﮭﯽ ﮐﯿﺎ , ﮐﮧ ﺍﺏ ﮐﻮﺋﯽ ﺍﺣﻮﺍﻝِ ﺩﻝ ﻧﮩﯿﮟ
ﭼﯿﺨﯿﮟ ﺑﮭﯽ ﮐﯿﺎ , ﮐﮧ ﺍﺏ ﮐﻮﺋﯽ ﺳُﻨﺘﺎ ﻧﮩﯿﮟ ﺻﺪﺍ
ﺁﻧﮑﮭﻮﮞ ﻣﯿﮟ ﮐﭽﮫ ﻧﮩﯿﮟ ﮬﮯ , ﺑَﺠُﺰ ﺧﺎﮎِ ﺭﮦ ﮔﺰﺭ
ﺳﯿﻨﮯ ﻣﯿﮟ ﮐﭽﮫ ﻧﮩﯿﮟ ﮬﮯ , ﺑَﺠُﺰ ﻧﺎﻟﮧ ﻭ ﻧَﻮﺍ
ﭘﮩﭽﺎﻥ ﻟﻮ ﮬﻤﯿﮟ ، ﮐﮧ ﺗﻤﮩﺎﺭﯼ ﺻﺪﺍ ﮬﯿﮟ ﮬﻢ
ﺳُﻦ ﻟﻮ ، ﮐﮧ ﭘﮭﺮ ﻧﮧ ﺁﺋﯿﮟ ﮔﮯ، ﮬﻢ ﺳﮯ ﻏﺰﻝ ﺳﺮﺍ
"
Click to View the full article (fundayforum.com)

WaQaS DaR

WaQaS DaR

 

Ajeeb larki

ﺗﻢ ﻋﺠﯿﺐ ﻟﮍﮐﯽ ﮨﻮ۔۔ ﺁﻧﺴﻮﺅﮞ ﮐﻮ ﭘﯿﺘﯽ ﮨﻮ۔۔ ﺯﮨﺮ ﺯﻧﺪﮔﯽ ﮐﮯ ﺳﺐ ﺳﺎﺗﮫ ﻟﮯ ﮐﮯ ﺟﯿﺘﯽ ﮨﻮ۔۔ ﭼﺎﻧﺪﻧﯽ ﮐﮯ ﮨﺎﻟﮯ ﮐﻮ ﺻﺒﺢ ﮐﮯ ﺍﺟﺎﻟﮯ ﮐﻮ ﺭﻭﺷﻨﯽ ﮐﮯ ﺑﺎﺩﻝ ﻣﯿﮟ ﺟﮭﻠﻤﻼﺗﮯ ﺁﻧﭽﻞ ﻣﯿﮟ ﺑﺎﻧﺪﮪ ﮐﮯ ﯾﻮﮞ ﺭﮐﮭﺘﯽ ﮨﻮ۔۔ ﺗﻢ ﻋﺠﯿﺐ ﻟﮍﮐﯽ ﮨﻮ۔۔ ﭼﮭﭗ ﮐﮯ ﺁﮨﯿﮟ ﺑﮭﺮﺗﯽ ﮨﻮ۔۔ ﺭﻭﺷﻨﯽ ﺳﮯ ﮈﺭﺗﯽ ﮨﻮ۔۔ ﺍﭘﻨﮯ ﺳﺎﺭﮮ ﺳﭙﻨﻮﮞ ﮐﻮ ﯾﻮﮞ ﭼﮭﭙﺎ ﮐﮯ ﺭﮐﮭﺘﯽ ﮨﻮ۔۔ ﺟﯿﺴﮯ ﺳﺎﺭﮮ ﺧﻮﺍﺑﻮﮞ ﭘﺮ ﻋﺸﻖ ﮐﮯ ﻋﺬﺍﺑﻮﮞ ﭘﺮ ﺑﺲ ﺗﻤﮩﺎﺭﺍ ﮨﯽ ﺣﻖ ﮨﮯ ﺍﯾﺴﮯ ﺑﺎﺗﯿﮟ ﮐﺮﺗﯽ ﮨﻮ۔۔ ﺗﻢ ﻋﺠﯿﺐ ﻟﮍﮐﯽ ﮨﻮ۔۔ ﺧﻮﺍﺏ ﺑﻨﺘﯽ ﭘﮭﺮﺗﯽ ﮨﻮ۔۔ ﺧﻮﺍﺏ ﮐﮯ ﺟﮭﺮﻭﮐﻮﮞ ﺳﮯ ﻣﺠﮫ ﮐﻮ ﺗﮑﺘﯽ ﺭﮨﺘﯽ ﮨﻮ۔۔ ﺍﻥ ﮔﻨﺖ ﺳﻮﺍﻟﻮﮞ ﺳﮯ ﺍﻥ ﮐﮩﮯ ﺟﻮﺍﺑﻮﮞ ﺳﮯ ﺑﺲ ﺍﻟﺠﮭﺘﯽ ﺭﮨﺘﯽ ﮨﻮ۔۔ ﺧﻮﺍﺏ ﺩﯾﮑﮭﺘﯽ ﺑﮭﯽ ﮨﻮ۔۔ ﭨﻮﭨﻨﮯ ﺳﮯ ﮈﺭﺗﯽ ﮨﻮ۔۔ ﺗﻢ ﻋﺠﯿﺐ ﻟﮍﮐﯽ ﮨﻮ۔۔ ﺗﻢ ﻭﻓﺎ ﮐﯽ ﺑﺎﺗﻮﮞ ﭘﺮ ﻣﺴﮑﺮﺍﺗﯽ ﺭﮨﺘﯽ ﮨﻮ۔۔ ﮔﮩﺮﯼ ﮔﮩﺮﯼ ﺁﻧﮑﮭﻮﮞ ﺳﮯ ﺩﻭﺭﺑﯿﮟ ﻧﮕﺎﮨﻮﮞ ﺳﮯ ﺳﺐ ﮐﻮ ﺩﯾﮑﮭﺎ ﮐﺮﺗﯽ ﮨﻮ۔۔ ﺍﻭﺭ ﺳﺐ ﺳﮯ ﭼﮭﭗ ﮐﮯ ﭘﮭﺮ ﺁﻧﺴﻮﺅﮞ ﮐﻮ ﭘﯿﺘﯽ ﮨﻮ۔۔ ﺟﺎﻧﮯ ﮐﯿﺴﮯ ﺟﯿﺘﯽ ﮨﻮ۔۔ ﺗﻢ۔۔۔۔۔۔۔ﻋﺠﯿﺐ ﻟﮍﮐﯽ ﮨﻮ۔۔ 
Click to View the full article (fundayforum.com)

WaQaS DaR

WaQaS DaR

 

udass logoo

جو ستارہ اداس ہے لوگو وہ مرا غم شناس ہے لوگو اس کی خوشبو بکھر رہی ہے ناں وہ مرے آس پاس ہے لوگو مجھ سے آخر کسے محبت ہے کون اتنا اداس ہے لوگو تم اِ سے شاعری سمجھتے ہو میرے دل کی بھڑاس ہے لوگو میری بنتی نہیں ہے خوشیوں سے غم ہی میری اساس ہے لوگو اب مجھے زخم سے محبت ہے اب مجھے درد راس ہے لوگو وہ کسی روز حال پوچھیں گے دل ابھی محوِ یاس ہے لوگو
Click to View the full article (fundayforum.com)

WaQaS DaR

WaQaS DaR

 

Mohabbatein

ﺩﻭﻧﻮﮞ ﮐﻮ ﺁ ﺳﮑﯽ ﻧﮧ ﻧﺒﮭﺎﻧﯽ ﻣﺤﺒﺘﯿﮟ ﺍﺏ ﭘﮍ ﺭﮨﯽ ﮨﯿﮟ ﮨﻢ ﮐﻮ ﺑﮭﻼﻧﯽ ﻣﺤﺒﺘﯿﮟ ﺳﺐ ﺳﺮ ﺑﺴﺮ ﻓﺮﯾﺐ ﮨﯿﮟ ﮐﯿﺎ ﺍﻧﮑﺎ ﺍﻋﺘﺒﺎﺭ ﯾﮧ ﭘﯿﺎﺭ، ﺣﺴﻦ، ﻋﺸﻖ ﺟﻮﺍﻧﯽ ﻣﺤﺒﺘﯿﮟ ﮐﻦ ﮐﻦ ﺭﻓﺎﻗﺘﻮﮞ ﮐﮯ ﺩﯾﮯ ﻭﺍﺳﻄﮯ ﻣﮕﺮ ﺍﺳﮑﻮ ﻧﮧ ﯾﺎﺩ ﺁﺋﯿﮟ ﭘﺮﺍﻧﯽ ﻣﺤﺒﺘﯿﮟ ﮔﺬﺭﯼ ﺭُﺗﻮﮞ ﮐﮯ ﺯﺧﻢ ﺍﺏ ﺗﮏ ﺑﮭﺮﮮ ﻧﮩﯿﮟ ﭘﮭﺮ ﺍﻭﺭ ﮐﯿﺎ ﮐﺴﯽ ﺳﮯ ﺑﮍﮬﺎﻧﯽ ﻣﺤﺒﺘﯿﮟ ﯾﺎ ﺩﻝ ﮐﯽ ﺣﺎﻟﺘﻮﮞ ﮐﺎ ﺑﯿﺎﮞ ﺳﺐ ﮐﮯ ﺳﺎﻣﻨﮯ ﯾﺎ ﺍﭘﻨﮯ ﺁﭖ ﺳﮯ ﺑﮭﯽ ﭼﮭﭙﺎﻧﯽ ﻣﺤﺒﺘﯿﮟ ﺟﺎﻧﮯ ﻭﮦ ﺁﺝ ﮐﻮﻥ ﺳﮯ ﺭﺳﺘﮯ ﺳﮯ ﺁﺋﮯ ﮔﮭﺮ، ﮨﺮ ﻣﻮﮌ، ﮨﺮ ﮔﻠﯽ ﻣﯿﮟ ﺑﭽﮭﺎﻧﯽ ﻣﺤﺒﺘﯿﮟ۔ ﻧﻔﺮﺕ ﮐﮯ ﻭﺍﺳﻄﮯ ﮐﺒﮭﯽ ﻓﺮﺻﺖ ﻧﮩﯿﮟ ﻣﻠﯽ ﮬﮯ ﺍﭘﻨﯽ ﻣﺨﺘﺼﺮ ﺳﯽ ﮐﮩﺎﻧﯽ ﻣﺤﺒﺘﯿﮟ۔۔ 
Click to View the full article (fundayforum.com)

WaQaS DaR

WaQaS DaR

 

Jaana

سوچ کے کرنا کوئی ، پیمان جاناں  وقت نہی رہتا سدا ، مہربان جاناں   موسم ، وقت ، قسمت سب تُم جیسے کب بدل جائیں ، گردش دوران جاناں    ممکن نہی ہے ہجرت ، روحِ قلوب سے  دل وہ بِن بام و در کا ، زندان جاناں   صحرا ، دشت ، شب ، ہُو کا عالم ہجر میں ہوا ہے دل ، بیابان جاناں    اغراض ہوتے ہیں عنایتوں کے پیچھے یونہی لوگ نہیں ہوتے مہربان جاناں   درخت پہ لکھے نام مٹ جاتے ہیں کتنے ہی انمٹ ہوں ، نشان جاناں    دو دن جواں رُت پہ زعم بے معنی  کون رہا ہے عمر بھر جوان جاناں   کاروبار میں ہوتا ہے ، نفع در نفع  عشق تو ہے سراسر نُقصان جاناں    خوابِ مُحبت ہے ، سب خواب غفلت  زندگی تو ہے سخت امتحان جاناں    عشق عنوان ِ ہوس ہے دور جدید کا بن جاتے ہیں لوگ اب حیوان جاناں    ادائیگیِ سود و اصل کے ، باوجود  عشق ادا کرتا ہے تاعمر لگان جاناں    قید سے کب کہیں کوئی جا سکا عشق مانگتا ہے ہونا قُربان جاناں    ہجر مار ڈالے ، پتھر دلوں کو بھی عاشق بھی تو ہیں ، انسان جاناں   آنکھ جھیل ، لب گُلاب ، قد دراز سُنہری رنگت ، آبرو کمان جاناں   جہاں بتائے ، چند لمحے وصال کے یاد کرتا ہے وہ ، کچّا مکان جاناں   میرے حال کی ہے تفسیر تیری  زیرِ لب مچلتی ، مُسکان جاناں    اظہار ہر بات کا لازم تو نہیں ہے سمجھ دھڑکنوں کی زبان جاناں  
Click to View the full article (fundayforum.com)

WaQaS DaR

WaQaS DaR

 

itne be jaan sahary to nahihoty ....

ﺍﺗﻨﮯ ﺑﮯ ﺟﺎﻥ ﺳﮩﺎﺭﮮ ﺗﻮ ﻧﮩﯿﮟ ﮨﻮﺗﮯ ﻧﺎﮞ
ﺩﺭﺩ ﺩﺭﯾﺎ ﮐﮯ ﮐﻨﺎﺭﮮ ﺗﻮ ﻧﮩﯿﮟ ﮨﻮﺗﮯ ﻧﺎﮞ
ﺭﻧﺠﺸﯿﮟ ﮨﺠﺮ ﮐﺎ ﻣﻌﯿﺎﺭ ﮔﮭﭩﺎ ﺩﯾﺘﯽ ﮨﯿﮟ
ﺭﻭﭨﮫ ﺟﺎﻧﮯ ﺳﮯ ﮔﺰﺍﺭﮮ ﺗﻮ ﻧﮩﯿﮟ ﮨﻮﺗﮯ ﻧﺎﮞ
ﺭﺍﺱ ﺭﮨﺘﯽ ﮨﮯ ﻣﺤﺒﺖ ﺑﮭﯽ ﮐﺌﯽ ﻟﻮﮔﻮﮞ ﮐﻮ
ﻭﮦ ﺑﮭﯽ ﻋﺮﺷﻮﮞ ﺳﮯ ﺍﺗﺎﺭﮮ ﺗﻮ ﻧﮩﯿﮟ ﮨﻮﺗﮯ ﻧﺎﮞ
ﮨﻮﻧﭧ ﺳﯿﻨﮯ ﺳﮯ ﮐﮩﺎﮞ ﺑﺎﺕ ﭼﮭﭙﯽ ﺭﮨﺘﯽ ﮨﮯ
ﺑﻨﺪ ﺁﻧﮑﮭﻮﮞ ﺳﮯ ﺍﺷﺎﺭﮮ ﺗﻮ ﻧﮩﯿﮟ ﮨﻮﺗﮯ ﻧﺎﮞ
ﮨﺠﺮ ﺗﻮ ﺍﻭﺭ ﻣﺤﺒﺖ ﮐﻮ ﺑﮍﮬﺎ ﺩﯾﺘﺎ ﮨﮯ
ﺍﺏ ﻣﺤﺒﺖ ﻣﯿﮟ ﺧﺴﺎﺭﮮ ﺗﻮ ﻧﮩﯿﮟ ﮨﻮﺗﮯ ﻧﺎﮞ
ﺯﯾﻦ ﺍﮎ ﺷﺨﺺ ﮨﯽ ﮨﻮﺗﺎ ﮨﮯ ﻣﺘﺎﻉ ﺩﻝ ﻭ ﺟﺎﮞ
ﺩﻝ ﻣﯿﮟ ﺍﺏ ﻟﻮﮒ ﺑﮭﯽ ﺳﺎﺭﮮ ﺗﻮ ﻧﮩﯿﮟ ﮨﻮﺗﮯ ﻧﺎﮞ
Click to View the full article (fundayforum.com)

WaQaS DaR

WaQaS DaR

 

jo guzar gya so guzar gya

Hama Waqt Ranj -o- Malaal Kia , Jo Guzar Gaya So Guzar Gia
Usay Yaad Kar Kay Na Dil Dukha , Jo Guzar Gia So Guzar Gia Na Gila Kia Na Khafa Howay, Yon Hi Raastey Main Juda Howay
Na Tu Be Wafa Na Main Be Wafa, Jo Guzar Gia So Guzar Gia Woh Ghazal Ki Ak Kitaab Tha, Woh Gulo’n Main Ak Gulaab Tha
Zara Dair Ka Koii Khwaa’b Tha, Jo Guzar Gia So Guzar Gia Mujhay Path Jharon Ki Kahaniyan, Na Suna Suna Kar Udaas Kar
Tu Kheezan Ka Phool Hay Muskura, , Jo Guzar Gia So Guzar Gia Woh Udaas Dhoop Samait Kar, Kahin Wadiyon Main Utar Chuka
Usay Ub Na Dey Meray Dil Sada, Jo Guzar Gia So Guzar Gia Yeh Safar Bhi Kitna Taweel Hay, Yahan Waqt Kitna Qaleel Hay
Kaha Lout Kar Koii Aaye Ga, Jo Guzar Gia So Guzar Gia Wo Wafa’en Theen Keh Jafa’en Theen, Yeh Na Soch Kis Ki Khata’en Theen
Wo Tera Hay Us Ko Galay Laga, Jo Guzar Gia So Guzar Gia Tujhey Ateybar -o- Yaqeen Nahi, Nahin Dunya Itni Buri Nahi
Na Malaal Kar Meray Saath Aa, Jo Guzar Gia So Guzar Gia
Click to View the full article (fundayforum.com)

WaQaS DaR

WaQaS DaR

Sign in to follow this