Sign in to follow this  
Followers 0
  • entries
    336
  • comments
    2
  • views
    17,242

About this blog

Urdu shairy ki duniya. This blog has RSS of latest shairy o shairy topics from fundayforum.com.

If you are poetry lover please share here your fav poetry in comments. 

( Fundayforum.com)

fdwatermarkfd.png

Entries in this blog

WaQaS DaR

رنجش ہی سہی دل ہی دکھانے کے لیے آ آ پھر سے مجھے چھوڑ کے جانے کے لیے آ کچھ تو مرے پندار محبت کا بھرم رکھ تو بھی تو کبھی مجھ کو منانے کے لیے آ پہلے سے مراسم نہ سہی پھر بھی کبھی تو رسم و رہ دنیا ہی نبھانے کے لیے آ کس کس کو بتائیں گے جدائی کا سبب ہم تو مجھ سے خفا ہے تو زمانے کے لیے آ اک عمر سے ہوں لذت گریہ سے بھی محروم اے راحت جاں مجھ کو رلانے کے لیے آ اب تک دل خوش فہم کو تجھ سے ہیں امیدیں یہ آخری شمعیں بھی بجھانے کے لیے آ


Click to View the full poetry article at (fundayforum.com)

WaQaS DaR

اسے کہنا محبت یوں بھی ہوتی ہے مہینوں رابطہ نہ ہو بھلےبرسوں قبل دیکھا ہو ہم نے ایک دوجے کو مگر پھر بھی سلامت ھی یہ رہتی ہے یہ برگ و بار لاتی ہے اسے کہنا مجھے اس سے محبت ہے کہ جیسے پھول کا خوشبو سے اک انجان رشتہ ہے اسے کہنا محبت میں کبھی وہ پھول بن جائے کبھی خوشبو وہ بن جائے اسے کہنا محبت میں ہے کوئی تیسرا بھی جو محبت کی وجہ بھی ہے کہ جس پھوٹتے ہیں پیار کے سارے ہی سرچشمے اسے کہنا کہ دنیا میں نہ جانے کب ملیں گے ہم مگر روز حشر ہم ساتھ ہوں گے عرش کے نیچے ہاں اس کے عرش کے نیچے جو میرا اور تمہارا اور محبت کا خدا بھی ہے


Click to View the full poetry article at (fundayforum.com)

WaQaS DaR

Tera Ehsas chuno

میں لفظ چُنوں .. دلکش چُنوں پھر ان سے تیرا احساس بُنوں تجھے لکھوں میں دھڑکن اس دل کی یا تجھ کو ابر کی رم جھم لکھوں ستاروں کی عجب جھلمل کبھی پلکوں کی تجھے شبنم لکھوں .. کبھی کہہ دوں تجھے میں جاں اپنی کبھی تجھ کو میں اپنا محرم لکھوں کبھی لکھ دوں تجھے ہر درد اپنا کبھی تجھ کو زخم کا مرہم لکھوں تو زیست کی ہے امید میری میں تجھ کو خوشی کی نوید لکھوں لفظوں پہ نگاہ جو ڈالوں کبھی ہر لفظ کو بیاں سے عاجز لکھوں! میں تجھ کو تکوں.. تکتی جاؤں میں تجھ کو میری تمہید لکھوں! تو گفت ہو میرے اس دل کی.. میں تجھ کو فقط شنید لکھوں....


Click to View the full poetry article at (fundayforum.com)

WaQaS DaR

ھُوں مَیں احوال فراموش مِرے ساتھ رھو آج سچ مُچ ھُوں مَیں بےہوش مِرے ساتھ رھو میری مستی کو ہے آغوشِ محبّت کی ھوَس اور نایاب ہے آغوش مِرے ساتھ رھو اے مِرے ہم نفسانِ روِش نیم شبی ھوچُکی بادہ سر جوش مِرے ساتھ رھو بس سُنے جاؤ تُمھاری ھی کہے جاؤں گا میرے یارو ہمہ تن گوش مِرے ساتھ رھو خواب کی شب کا ھُوں مَیں ھی تو بس خوش گُفتار خواب کے شہر میں خاموش مِرے ساتھ رھو کیا خبر راہ میں مُجھ سے کوئی سر ٹکرا دے ھوں گے کُچھ اور بھی مدھوش مِرے ساتھ رھو پی کے آیا تھا مَیں پھر ساتھ تمھارا بھی دیا میکشو تُم کہ ھو کم نوش مِرے ساتھ رھو وعدہء شام کا مطلب ہے سَحر کا وعدہ وہ ہے اِک وعدہ فراموش مِرے ساتھ رھو تُم مِرے ساتھ رھو مست خیالو تم کو فِکر فردا نہ غم دوش مِرے ساتھ رھو۔۔۔! جونؔ ایلیا


Click to View the full poetry article at (fundayforum.com)

WaQaS DaR

this is the full opportunity given to the wise people in Africa Are you frustrated in life. What type of wealth do you want? Today the black cart has order us to bring member to his kingdom. Are you tired of poverty and now you want fame,power and riches.Our magical powers are beyond your imagination. we could do magic on your behalf regarding , your financial situation, future events, or whatever is important to you. we have the power and we use the power. we are black cart brotherhood and we could change the course of destiny. Get to us and we shall help you. Tell us what it is you want and we shall go about our work. Is it someone or something you desire to have? Do you want wealth(Want to grow your bank account?, Need funds to enjoy the good life? Tired of working hard and getting nothing, the most power society welcomes you to black cart brotherhood. contact initiation home +2347087521893 FOR 'i want to join occult in Nigeria' 'i want to join real occult in Ghana' 'i want to join occult in Africa to be rich' 'i want to join an occult for money and power' 'i want to join an occult for wealth and protection' 'i want to join good occult fraternity in Nigeria' 'i want to join great BLACK CART in Nigeria to be rich' 'i want to join BLACK CART occult in Nigeria/Africa' 'i want to join BLACK CART brotherhood in Nigeria' we are now here for you


Click to View the full poetry article at (fundayforum.com)

WaQaS DaR

رَنـــجِ فـــراقِ یار میں رُســــوا نہیں ہُوا اتنا مــــیں چُپ ہُوا کہ تماشہ نہیں ہُوا ایساسفر ہےجس میں کوئی ہمسفر نہیں رستہ ہے اس طــرح کا کہ دیکھا نہیں ہُوا مشکل ہُوا ہے رہنا ہمـــیں اِس دیار مــیں برسوں یہاں رہے ہـــیں ، یہ اپنا نہیں ہُوا وہ کام شاہِ شــہر سے یا شــہر سے ہُوا جــو کام بھی ہُوا ، یـــہاں اچھا نہیں ہُوا ملنا تھا ایک بار اُسے پھـــر کہیں ' منیرؔ ایسا مـــیں چاھتا تھا، پر ایسا نہیں ہُوا؎! منیر نیازی


Click to View the full poetry article at (fundayforum.com)

WaQaS DaR

یہ معجزہ بھی محبّت کبھی دِکھائے مجھے کہ سنگ تجھ پہ گِرے اور زخم آئے مجھے میں اپنے پاؤں تلے روندتا ہُوں سائے کو بدن مِرا ہی سہی، دوپہر نہ بھائے مجھے بَرنگِ عَود مِلے گی اُسے مِری خوشبُو وہ جب بھی چاہے، بڑے شوق سے جَلائے مجھے میں گھر سے، تیری تمنّا پہن کے جب نِکلوں برہنہ شہر میں ‌کوئی نظر نہ آئے مجھے وہی تو سب سے زیادہ ہے نُکتہ چِیں میرا جو مُسکرا کے ہمیشہ گلے لگائے مجھے میں اپنے دِل سے نِکالوں خیال کِس کِس کا جو تو نہیں تو کوئی اور یاد آئے مجھے زمانہ درد کے صحرا تک آج لے آیا گُزار کر تِری زُلفوں کے سائے سائے مجھے وہ میرا دوست ہے، سارے جہاں‌ کو ہے معلوُم دَغا کرے وہ کسی سے تو شرم آئے مجھے وہ مہْرباں ہے، تو اِقرار کیوں نہیں کرتا وہ بدگُماں ہے، تو سو بار آزمائے مجھے میں اپنی ذات میں نِیلام ہو رہا ہُوں، غمِ حیات سے کہہ دو خرِید لائے مجھے - قتیل شفائی


Click to View the full poetry article at (fundayforum.com)

WaQaS DaR

دشوار

کتنا دشوار تھا دنیا یہ ہنر آنا بھی تجھ سے ہی فاصلہ رکھنا تجھے اپنانا بھی کیسی آداب نمائش نے لگائیں شرطیں پھول ہونا ہی نہیں پھول نظر آنا بھی دل کی بگڑی ہوئی عادت سے یہ امید نہ تھی بھول جائے گا یہ اک دن ترا یاد آنا بھی جانے کب شہر کے رشتوں کا بدل جائے مزاج اتنا آساں تو نہیں لوٹ کے گھر آنا بھی ایسے رشتے کا بھرم رکھنا کوئی کھیل نہیں تیرا ہونا بھی نہیں اور ترا کہلانا بھی خود کو پہچان کے دیکھے تو ذرا یہ دریا بھول جائے گا سمندر کی طرف جانا بھی جاننے والوں کی اس بھیڑ سے کیا ہوگا وسیمؔ اس میں یہ دیکھیے کوئی مجھے پہچانا بھی


Click to View the full poetry article at (fundayforum.com)

WaQaS DaR

تُو سمجھتا ہے محبت سے گزر جائے گا ؟ تُو جو نکلے گا کناروں سے تو مر جائے گا یہ ضروری تو نہیں ہجر کے لمحات گنوں "وقت کا کیا ہے، گزرتا ہے، گزر جائے گا" یہ ترے بس کا نہیں روگ، میاں چھوڑ اسے تُو بدن چاٹ کے الفت سے مکر جائے گا میرے رونے سے سمندر میں اضافہ نہ سہی کم سے کم آنکھ کا دریا تو اتر جائے گا اے مرے عکسِ جنوں دیکھ مرے چہرے کو تُو بھی خاموش رہے گا تو بکھر جائے گا قیس کو قیس نما اور مجھے قیس کہا میں نہ کہتا تھا مجھے دیکھ کے ڈر جائے گا


Click to View the full poetry article at (fundayforum.com)

WaQaS DaR

دل کی تکلیف کم نہیں کرتے اب کوئی شکوہ ہم نہیں کرتے جان جاں تجھ کو اب تیری خاطر یاد ہم کوئی دم نہیں کرتے دوسری ہار کی ہوس ہے سو ہم کو سر تسلیم خم نہیں کرتے وہ بھی پڑھتا نہیں ہے اب دل سے ہم بھی نالے کو نم نہیں کرتے جرم میں ہم کمی کریں بھی تو کیوں تم سزا بھی تو کم نہیں کرتے جون ایلیاء


Click to View the full poetry article at (fundayforum.com)

WaQaS DaR

جب کوئی پیار سے بلائے گا تم کو ایک شخص یاد آئے لذت غم سے آشنا ہو کر اپنے محبوب سے جدا ہو کر دل کہیں جب سکوں نہ پائے گا تم کو ایک شخص یاد آئے گا تیرے لب پہ نام ہو گا پیار کا شمع دیکھ کر جلے گا دل تیرا جب کوئی ستارہ ٹمٹمائے گا تم کو ایک شخص یاد آئے گا زندگی کے درد کو سہو گے تم دل کا چین ڈھونڈتے رہو گے تم زخم دل جب تمہیں ستائے گا تم کو ایک شخص یاد آئے گا جب کوئی پیار سے بولائے گا تم کو ایک شخص یاد آئے گا


Click to View the full poetry article at (fundayforum.com)

WaQaS DaR

گرمیِ حسرت ناکام سے جل جاتے ہیں ہم چراغوں کی طرح شام سے جل جاتے ہیں شمع جس آگ میں جلتی ہے نمائش کے لئے ہم اسی آگ میں گمنام سے جل جاتے ہیں بچ نکلتے ہیں اگر آتشِ سیال سے ہم شعلۂ عارضِ گلفام سے جل جاتے ہیں خود نمائی تو نہیں شیوۂ اربابِ وفا جن کو جلنا ہو وہ آرام سے جل جاتے ہیں ربط باہم پہ ہمیں کیا نہ کہیں گے دشمن آشنا جب ترے پیغام سے جل جاتے ہیں جب بھی آتا ہے مرا نام ترے نام کے ساتھ جانے کیوں لوگ مرے نام سے جل جاتے ہیں قتیل شفائی


Click to View the full poetry article at (fundayforum.com)

WaQaS DaR

اور آہستہ کیجیے باتیں دھڑکنیں کوئی سُن رہا ہوگا لفظ گِرنے نہ پائے ہونٹوں سے وقت کے ہاتھ اُن کو چُن لیں گے کان رکھتے ہیں یہ در و دیوار راز کی ساری بات سُن لیں گے اور آہستہ کیجیے باتیں دھڑکنیں کوئی سُن رہا ہوگا ایسے بولو کہ دِل کا افسانہ دِل سُنے اور نِگاہ دُہرائے اپنے چاروں طرف کی یہ دُنیا سانس کا شور بھی نہ سُن پائے اور آہستہ کیجیے باتیں دھڑکنیں کوئی سُن رہا ہوگا آئیے بند کر لیں دروازے رات سپنے چُرا نہ لے جائے کوئی جھونکا ہَوا کا آوارہ دِل کی باتوں کو اُڑا نہ لے جائے اور آہستہ کیجیے باتیں دھڑکنیں کوئی سُن رہا ہو گا... دھڑکنیں کوئی سُن رہا ہوگا لفظ گِرنے نہ پائے ہونٹوں سے وقت کے ہاتھ اُن کو چُن لیں گے کان رکھتے ہیں یہ در و دیوار راز کی ساری بات سُن لیں گے اور آہستہ کیجیے باتیں دھڑکنیں کوئی سُن رہا ہوگا ایسے بولو کہ دِل کا افسانہ دِل سُنے اور نِگاہ دُہرائے اپنے چاروں طرف کی یہ دُنیا سانس کا شور بھی نہ سُن پائے اور آہستہ کیجیے باتیں دھڑکنیں کوئی سُن رہا ہوگا آئیے بند کر لیں دروازے رات سپنے چُرا نہ لے جائے کوئی جھونکا ہَوا کا آوارہ دِل کی باتوں کو اُڑا نہ لے جائے اور آہستہ کیجیے باتیں دھڑکنیں کوئی سُن رہا ہو گا


Click to View the full poetry article at (fundayforum.com)

WaQaS DaR

اور آہستہ کیجیے باتیں دھڑکنیں کوئی سُن رہا ہوگا لفظ گِرنے نہ پائے ہونٹوں سے وقت کے ہاتھ اُن کو چُن لیں گے کان رکھتے ہیں یہ در و دیوار راز کی ساری بات سُن لیں گے اور آہستہ کیجیے باتیں دھڑکنیں کوئی سُن رہا ہوگا ایسے بولو کہ دِل کا افسانہ دِل سُنے اور نِگاہ دُہرائے اپنے چاروں طرف کی یہ دُنیا سانس کا شور بھی نہ سُن پائے اور آہستہ کیجیے باتیں دھڑکنیں کوئی سُن رہا ہوگا آئیے بند کر لیں دروازے رات سپنے چُرا نہ لے جائے کوئی جھونکا ہَوا کا آوارہ دِل کی باتوں کو اُڑا نہ لے جائے اور آہستہ کیجیے باتیں دھڑکنیں کوئی سُن رہا ہو گا


Click to View the full poetry article at (fundayforum.com)

WaQaS DaR

یہ شیشے یہ سپنے یہ رشتے یہ دھاگے کسے کیا خبر ہے کہاں ٹوٹ جائیں محبت کے دریا میں .."تنکے وفا " کے نہ جانے یہ کس موڑ پر ڈوب جائیں.. عجب دل کی بستی عجب دل کی وادی ہر اک موڑ موسم نئی خواہشوں کا لگائے ہیں ہم نے بھی سپنوں کے پودے مگر کیا بھروسہ یہاں بارشوں کا" مرادوں کی منزل کے سپنوں میں کھوئے محبت کی راہوں پہ ہم چل پڑے تھے ذرا دور چل کے جب آنکھیں کھلیں تو کڑی دھوپ میں ہم اکیلے کھڑے تھے جنہیں دل سے چاہا جنہیں دل سے پوجا نظر آرہے ہیں وہی "اجنبی سے" "روایت ہے شاید یہ صدیوں پرانی "شکایت نہیں ہے کوئی____ زندگی سے"...!! Image from facebook


Click to View the full poetry article at (fundayforum.com)

WaQaS DaR

یہ شیشے یہ سپنے یہ رشتے یہ دھاگے کسے کیا خبر ہے کہاں ٹوٹ جائیں محبت کے دریا میں .."تنکے وفا " کے نہ جانے یہ کس موڑ پر ڈوب جائیں.. عجب دل کی بستی عجب دل کی وادی ہر اک موڑ موسم نئی خواہشوں کا لگائے ہیں ہم نے بھی سپنوں کے پودے مگر کیا بھروسہ یہاں بارشوں کا" مرادوں کی منزل کے سپنوں میں کھوئے محبت کی راہوں پہ ہم چل پڑے تھے ذرا دور چل کے جب آنکھیں کھلیں تو کڑی دھوپ میں ہم اکیلے کھڑے تھے جنہیں دل سے چاہا جنہیں دل سے پوجا نظر آرہے ہیں وہی "اجنبی سے" "روایت ہے شاید یہ صدیوں پرانی "شکایت نہیں ہے کوئی____ زندگی سے"...!!


Click to View the full poetry article at (fundayforum.com)

WaQaS DaR

،ﮐﺒﮭﯽ ﻣﺎﯾﻮﺱ ﻣﺖ ﮨﻮﻧﺎ ،ﺍﻧﺪﮬﯿﺮﺍ ﮐﺘﻨﺎ ﮔﮩﺮﺍ ﮨﻮ ﺳﺤﺮ ﮐﯽ ﺭﺍﮦ ﻣﯿﮟ ﺣﺎﺋﻞ ،ﮐﺒﮭﯽ ﺑﮭﯽ ﮨﻮ ﻧﮩﯿﮟ ﺳﮑﺘﺎ ،ﺳﻮﯾﺮﺍ ﮨﻮ ﮐﮯ ﺭﮨﺘﺎ ﮨﮯ ،ﮐﺒﮭﯽ ﻣﺎﯾﻮﺱ ﻣﺖ ﮨﻮﻧﺎ ،ﺍﻣﯿﺪﻭﮞ ﮐﮯ ﺳﻤﻨﺪﺭ ﻣﯿﮟ ،ﺗﻼﻃﻢ ﺁﺗﮯ ﺭﮨﺘﮯ ﮨﯿﮟ ،ﺳﻔﯿﻨﮯ ﮈﻭﺑﺘﮯ ﺑﮭﯽ ﮨﯿﮟ ،ﺳﻔﺮ ﻟﯿﮑﻦ ﻧﮩﯿﮟ ﺭﮐﺘﺎ ،ﻣﺴﺎﻓﺮ ﭨﻮﭦ ﺟﺎﺗﮯ ﮨﯿﮟ ،ﻣﮕﺮ ﻣﺎﻧﺠﮭﯽ ﻧﮩﯿﮟ ﺗﮭﮑﺘﺎ ،ﺳﻔﺮ ﻃﮯ ﮨﻮ ﮐﮯ ﺭﮨﺘﺎ ﮨﮯ ،ﮐﺒﮭﯽ ﻣﺎﯾﻮﺱ ﻣﺖ ﮨﻮﻧﺎ ،ﺧﺪﺍ ﺣﺎﺿﺮ ﮨﮯ ﻧﺎﻇﺮ ﺑﮭﯽ ،ﺧﺪﺍ ﻇﺎﮨﺮ ﮨﮯ ﻣﻨﻈﺮ ﺑﮭﯽ ،ﻭﮨﯽ ﮨﮯ ﺣﺎﻝ ﺳﮯ ﻭﺍﻗﻒ ،ﻭﮨﯽ ﺳﯿﻨﻮﮞ ﮐﮯ ﺍﻧﺪﺭ ﺑﮭﯽ ،ﻣﺼﯿﺒﺖ ﮐﮯ ﺍﻧﺪﮬﯿﺮﻭﮞ ﻣﯿﮟ ،ﮐﺒﮭﯽ ﺗﻢ ﻣﺎﻧﮓ ﮐﺮ ﺩﯾﮑﮭﻮ ،ﺗﻤﮩﺎﺭﯼ ﺁﻧﮑﮫ ﮐﮯ ﺁﻧﺴﻮ ،ﯾﻮﮞ ﮨﯽ ﮈﮬﻠﻨﮯ ﻧﮩﯿﮟ ﺩﮮ ﮔﺎ ،ﺗﻤﮩﺎﺭﯼ ﺁﺱ ﮐﯽ ﮔﺎﮔﺮ ،ﮐﺒﮭﯽ ﮔﺮﻧﮯ ﻧﮩﯿﮟ ﺩﮮ ﮔﺎ ،ﮨﻮﺍ ﮐﺘﻨﯽ ﻣﺨﺎﻟﻒ ﮨﻮ ،ﺗﻤﮩﯿﮟ ﻣﮍﻧﮯ ﻧﮩﯿﮟ ﺩﮮ ﮔﺎ ،ﮐﺒﮭﯽ ﻣﺎﯾﻮﺱ ﻣﺖ ﮨﻮﻧﺎ ،ﻭﮨﺎﮞ ﺍﻧﺼﺎﻑ ﮐﯽ ﭼﮑّﯽ ،ﺫﺭﺍ ﺩﮬﯿﺮﮮ ﺳﮯ ﭼﻠﺘﯽ ﮨﮯ ،ﻣﮕﺮ ﭼﮑّﯽ ﮐﮯ ﭘﺎﭨﻮﮞ ﻣﯿﮟ ،ﺑﮩﺖ ﺑﺎﺭﯾﮏ ﭘﺴﺘﺎ ﮨﮯ ،ﺗﻤﮩﺎﺭﮮ ﺍﯾﮏ ﮐﺎ ﺑﺪﻟﮧ ،ﻭﮨﺎﮞ ﺳﺘﺮ ﺳﮯ ﺯﯾﺎﺩﮦ ﮨﮯ ،ﻧﯿﺖ ﺗﻠﺘﯽ ﮨﮯ ﭘﻠﮍﻭﮞ ﻣﯿﮟ ،ﻋﻤﻞ ﻧﺎﭘﮯ ﻧﮩﯿﮟ ﺟﺎﺗﮯ ،ﻭﮨﺎﮞ ﺟﻮ ﮨﺎﺗﮫ ﺍﭨﮭﺘﮯ ﮨﯿﮟ ،ﮐﺒﮭﯽ ﺧﺎﻟﯽ ﻧﮩﯿﮟ ﺁﺗﮯ ،ﺫﺭﺍ ﺳﯽ ﺩﯾﺮ ﻟﮕﺘﯽ ﮨﮯ ،ﻣﮕﺮ ﻭﮦ ﺩﮮ ﮐﮯ ﺭﮨﺘﺎ ﮨﮯ ،ﮐﺒﮭﯽ ﻣﺎﯾﻮﺱ ﻣﺖ ﮨﻮﻧﺎ ،ﺩﺭﯾﺪﮦ ﺩﺍﻣﻨﻮﮞ ﮐﻮ ﻭﮦ ،ﺭﻓﻮ ﮐﺮﺗﺎ ﮨﮯ ﺭﺣﻤﺖ ﺳﮯ ،ﺍﮔﺮ ﮐﺶ ﮐﻮﻝ ﭨﻮﭨﺎ ﮨﻮ ،ﺗﻮ ﻭﮦ ﺑﮭﺮﺗﺎ ﮨﮯ ﻧﻌﻤﺖ ﺳﮯ ،ﮐﺒﮭﯽ ﺍﯾﻮﺏؑ ﮐﯽ ﺧﺎﻃﺮ ،ﺯﻣﯿﮟ ﭼﺸﻤﮧ ﺍﺑﻠﺘﯽ ﮨﮯ ،ﮐﮩﯿﮟ ﯾﻮﻧﺲؑ ﮐﮯ ﮨﻮﻧﭩﻮﮞ ﭘﺮ ،ﺍﮔﺮ ﻓﺮﯾﺎﺩ ﺍﭨﮭﺘﯽ ﮨﮯ ،ﮐﺴﯽ ﺑﻨﺠﺮ ﺟﺰﯾﺮﮮ ﭘﺮ ،ﮐﺪﻭ ﮐﯽ ﺑﯿﻞ ﺍﮔﺘﯽ ﮨﮯ ،ﺟﻮ ﺳﺎﯾﮧ ﺑﮭﯽ ﮨﮯ ﭘﺎﻧﯽ ﺑﮭﯽ ،ﻋﻼﺝِ ﻧﺎ ﺗﻮﺍﻧﯽ ﺑﮭﯽ ،ﮐﺒﮭﯽ ﻣﺎﯾﻮﺱ ﻣﺖ ﮨﻮﻧﺎ ،ﺗﻤﮩﺎﺭﮮ ﺩﻝ ﮐﯽ ﭨﯿﺴﻮﮞ ﮐﻮ ،ﯾﻮﮞ ﮨﯽ ﺩُﮐﮭﻨﮯ ﻧﮩﯿﮟ ﺩﮮ ﮔﺎ ،ﺗﻤﻨﺎ ﮐﺎ ﺩﯾﺎ ﻋﺎﺻﻢؔ ﮐﺒﮭﯽ ،ﺑﺠﮭﻨﮯ ﻧﮩﯿﮟ ﺩﮮ ﮔﺎ ،ﮐﺒﮭﯽ ﻭﮦ ﺁﺱ ﮐﺎ ﺩﺭﯾﺎ ،ﮐﮩﯿﮟ ﺭﮐﻨﮯ ﻧﮩﯿﮟ ﺩﮮ ﮔﺎ ،ﮐﺒﮭﯽ ﻣﺎﯾﻮﺱ ﻣﺖ ﮨﻮﻧﺎ ،ﺟﺐ ﺍُﺱ ﮐﮯ ﺭﺣﻢ ﮐﺎ ﺳﺎﮔﺮ ،ﭼﮭﻠﮏ ﮐﮯ ﺟﻮﺵ ﮐﮭﺎﺗﺎ ﮨﮯ ،ﻗﮩﺮ ﮈﮬﺎﺗﺎ ﮨﻮﺍ ﺳﻮﺭﺝ ،ﯾﮑﺎ ﯾﮏ ﮐﺎﻧﭗ ﺟﺎﺗﺎ ﮨﮯ ،ﮨﻮﺍ ﺍﭨﮭﺘﯽ ﮨﮯ ﻟﮩﺮﺍ ﮐﺮ ،ﮔﮭﭩﺎ ﺳﺠﺪﮮ ﻣﯿﮟ ﮔﺮﺗﯽ ﮨﮯ ،ﺟﮩﺎﮞ ﺩﮬﺮﺗﯽ ﺗﺮﺳﺘﯽ ﮨﮯ ،ﻭﮨﯿﮟ ﺭﺣﻤﺖ ﺑﺮﺳﺘﯽ ﮨﮯ ،ﺗﺮﺳﺘﮯ ﺭﯾﮓ ﺯﺍﺭﻭﮞ ﭘﺮ ،ﺍﺑﺮ ﺑﮩﮧ ﮐﮯ ﮨﯽ ﺭﮨﺘﺎ ﮨﮯ ،ﻧﻈﺮ ﻭﮦ ﺍﭨﮫ ﮐﮯ ﺭﮨﺘﯽ ﮨﮯ ،ﮐﺮﻡ ﮨﻮ ﮐﮯ ﮨﯽ ﺭﮨﺘﺎ ﮨﮯ ،ﺍﻣﯿﺪﻭﮞ ﮐﺎ ﭼﻤﮑﺘﺎ ﺩﻥ ،ﺍﻣﺮ ﮨﻮ ﮐﮯ ﮨﯽ ﺭﮨﺘﺎ ﮨﮯ ،ﮐﺒﮭﯽ ﻣﺎﯾﻮﺱ ﻣﺖ ﮨﻮﻧﺎ


Click to View the full poetry article at (fundayforum.com)

WaQaS DaR

آنکھوں میں سِتارے تو کئی شام سے اُترے پر دِل کی اُداسی نہ در و بام سے اُترے کُچھ رنگ تو اُبھرے تِری گُل پیرہنی کا کُچھ زنگ تو آئینہء ایام سے اُترے ہوتے رہے دِل لمحہ بہ لمحہ تہہ و بالا وہ زینہ بہ زینہ بڑے آرام سے اُترے جب تک تِرے قدموں میں فروکش ہیں سبُو کش ساقی خطِ بادہ نہ لبِ جام سے اُترے بے طمع نوازش بھی نہیں سنگ دِلوں کی شاید وہ مِرے گھر بھی کسی کام سے اُترے اوروں کے قصیدے فقط آورد تھے جاناں جو تُجھ پہ کہے شعر وہ الہام سے اُترے اے جانِ فراز ؔاے مِرے ہر دُکھ کے مسیحا ہر زہر زمانے کا تیرے نام سے اُترے


Click to View the full poetry article at (fundayforum.com)

WaQaS DaR

اِک سوچ عقل سے پھسل گئی مجھے یاد تھی کےبدل گئ میری سوچ تھی کے وہ خواب تھا میری زندگی کا حساب تھا میری جستجو کے بر عکس تھی میری مشکلوں کا وہ عکس تھی مجھے یاد ہو تو وہ سوچ تھی جو نہ یاد ہو تو گُمان تھا مجھے بیٹھے بیٹھے گُماں ہوا گُماں نہیں تھا وہ خُدا تھا میری سوچ نہیں تھی-خُدا تھا وہ وہ خُدا کے جس نے زباں،دِل دیا جان دی وہ زباں کے جسے نا چلا سکیں وہی دِل جسے نا منا سکیں وہی جاں جسے نا لگا سکیں کبھی مل تو تُجھے بتا ئیں ہم تُجھے اس طرح سےستائیں ہم تیرا عشق تُجھ سے چھین کر تُجھے مے پِلا کے رُلائیں ہم تُجھ درد دوں تو نہ سہے َسکے تُجھے دوں زُباں تو نا کہے سَکے تُجھے دوں مکاں تو نہ رہے سَکے تُجھے مشکلوں میں گِھرا کر میں کوئی ایسا رستا نکال دوں تیرے درد کی میں دوا کروں کسی غرض کے میں سوّا کروں تُجھے ہر نظر پے عُبور دوں تُجھے زندگی کا شعور دوں کبھی مل بھی جائیں گے غم نہ کر ہم گر بھی جائیں گے غم نہ کر تیرے ایک ہونے میں شَک نہیں میری نِیّتوں کو تُو صاف کر تیری شان میں بھی کَمّی نہیں میرے اس کلام کو تُو معاف کر.. علی ہمدانی


Click to View the full poetry article at (fundayforum.com)

WaQaS DaR

تم کن پر نظمیں لکھتے ھو ؟؟ تم کن پر گیت بناتے ھو ؟؟ تم کن کے شعلے اوڑھتے ھو؟؟ تم کن کی آگ بجھاتے ھو ؟؟ اے دیدہ ورو انصاف کرو اُس آگ پہ تم نے کیا لکھا؟؟ جس آگ میں سب کچھ راکھ ھُوا مری منزل بھی ، میرا رستہ بھی مرا مکتب بھی ، میرا بستہ بھی مرے بستے کے لشکارے بھی مرے ست رنگے غبارے بھی مرے جگنو بھی ، میرے تارے بھی اے دیدہ ورو انصاف کرو وہ راہ نہیں دیکھی میں نے جو مکتب کو جاتی ھے اِس ھَوا نے مجھ کو چُھوا نہیں جو نیندوں کو مہکاتی ھے اور میٹھے خواب دکھاتی ھے اس کرب پہ تم نے کیا لکھا ؟؟ اے دیدہ ورو انصاف کرو مری تختی کیسے راکھ ھُوئی ؟؟ مرا بستہ کس نے چھین لیا ؟؟ مری منزل کس نے کھوٹی کی ؟؟ مرا رستہ کس نے چھین لیا ؟؟ انصاف کرو اے دیدہ ورو انصاف کرو (اعتبار ساجد)


Click to View the full poetry article at (fundayforum.com)

WaQaS DaR

لگتا تو یوں ہے جیسے سمجھتا نہیں ہے وہ معصوم جتنا لگتا ہے اتنا نہیں ہے وہ مجھ میں بسا ہوا بھی ہے وہ سر سے پیر تک اور کہہ رہا ہے یہ بھی کہ میرا نہیں ہے وہ کر دونگا موم باتوں میں سوز و گداز سے جذبات کی تپش سے مبرا نہیں ہے وہ واضح یہ کر چکا ہے یقیں دل کے وہم پر میرا ہے صرف اور کسی کا نہیں ہے وہ رہتا ہے اس کے ساتھ ہمیشہ مرا خیال تنہایوں میں رہ کے بھی تنہا نہیں ہے وہ ہوگا غلط بیان میں مجبوریوں کا ہاتھ حق بات ورنہ یہ ہے کہ جھوٹا نہیں ہے وہ ٹھہرا وہ پھول، بوسے لبوں کے ملے اسے پتوں کی طرح پیروں میں آیا نہیں ہے وہ مرنے کے بعد آیا ہے کرنے مرا علاج مانا کہ چارہ گر ہے. مسیحا نہیں ہے وہ جاوید رات دن ہے ترا انتظار اسے کہنے کو تیرے پیار کا بھوکا نہیں ہے وہ ڈاکٹر جاوید جمیل


Click to View the full poetry article at (fundayforum.com)

WaQaS DaR

ﺗﺘﻠﯿﻮﮞ ﮐﮯ ﻣﻮﺳﻢ ﻣﯿﮟ ﻧﻮﭼﻨﺎ ﮔﻼﺑﻮﮞ ﮐﺎ ............... ﺭﯾﺖ ﺍﺱ ﻧﮕﺮ ﮐﯽ ﮨﮯﺍﻭﺭ ﺟﺎﻧﮯ ﮐﺐ ﺳﮯ ﮨﮯ .............. ﺩﯾﮑﮫ ﮐﺮ ﭘﺮﻧﺪﻭﮞ ﮐﻮ ﺑﺎﻧﺪﮬﻨﺎ ﻧﺸﺎﻧﻮﮞ ﮐﺎ ................... ﺭﯾﺖ ﺍﺱ ﻧﮕﺮ ﮐﯽ ﮨﮯﺍﻭﺭ ﺟﺎﻧﮯ ﮐﺐ ﺳﮯ ﮨﮯ ............... ﺗﻢ ﺍﺑﮭﯽ ﻧﺌﮯ ﮨﻮ ﻧﺎﮞ ! ﺍﺱ ﻟﯿﮯ ﭘﺮﯾﺸﺎﮞ ﮨﻮ .............. ﺁﺳﻤﺎﻥ ﮐﯽ ﺟﺎﻧﺐ ﺍﺱ ﻃﺮﺡ ﺳﮯ ﻣﺖ ﺩﯾﮑﮭﻮ .................. ﺁﻓﺘﯿﮟ ﺟﺐ ﺁﻧﯽ ﮨﻮﮞ ، ﭨﻮﭨﻨﺎ ﺳﺘﺎﺭﻭﮞ ﮐﺎ .................... ﺭﯾﺖ ﺍﺱ ﻧﮕﺮ ﮐﯽ ﮨﮯﺍﻭﺭ ﺟﺎﻧﮯ ﮐﺐ ﺳﮯ ﮨﮯ .................. ﺷﮩﺮ ﮐﮯ ﯾﮧ ﺑﺎﺷﻨﺪﮮ ﺑﻮ ﮐﮯ ﺑﯿﺞ ﻧﻔﺮﺕ ﮐﮯ ............... ﺍﻧﺘﻈﺎﺭ ﮐﺮﺗﮯ ﮨﯿﮟ ﻓﺼﻞ ﮨﻮ ﻣﺤﺒﺖ ﮐﯽ .................. ﭼﮭﻮﮌ ﮐﺮ ﺣﻘﯿﻘﺖ ﮐﻮ ﮈﮬﻮﻧﮉﻧﺎ ﺳﺮﺍﺑﻮﮞ ﮐﺎ ................. ﺭﯾﺖ ﺍﺱ ﻧﮕﺮ ﮐﯽ ﮨﮯﺍﻭﺭ ﺟﺎﻧﮯ ﮐﺐ ﺳﮯ ﮨﮯ ................. ﺍﺟﻨﺒﯽ ﻓﻀﺎﺅﮞ ﻣﯿﮟ ﺍﺟﻨﺒﯽ ﻣﺴﺎﻓﺮ ﺳﮯ ............. ﺍﭘﻨﮯ ﮨﺮ ﺗﻌﻠﻖ ﮐﻮ ﺩﺍﺋﻤﯽ ﺳﻤﺠﮫ ﻟﯿﻨﺎ ......................... ﺍﻭﺭ ﺟﺐ ﺑﭽﮭﮍ ﺟﺎﻧﺎ ﻣﺎﻧﮕﻨﺎ ﺩﻋﺎﺅﮞ ﮐﺎ .................. ﺭﯾﺖ ﺍﺱ ﻧﮕﺮ ﮐﯽ ﮨﮯﺍﻭﺭ ﺟﺎﻧﮯ ﮐﺐ ﺳﮯ ﮨﮯ ............. .......... ﺧﺎﻣﺸﯽ ﻣﺮﺍ ﺷﯿﻮﮦ ﮔﻔﺘﮕﻮ ﮨﻨﺮ ﺍُﺱ ﮐﺎ ............. ............... ﻣﯿﺮﯼ ﺑﮯ ﮔﻨﺎﮨﯽ ﮐﻮ ﻟﻮﮒ ﮐﯿﺴﮯ ﻣﺎﻧﯿﮟ ﮔﮯ ............. ............... ﺑﺎﺕ ﺑﺎﺕ ﭘﺮ ﺟﺒﮑﮧ ﻣﺎﻧﮕﻨﺎ ﺣﻮﺍﻟﻮﮞ ﮐﺎ ............................ ﺭﯾﺖ ﺍﺱ ﻧﮕﺮ ﮐﯽ ﮨﮯﺍﻭﺭ ﺟﺎﻧﮯ ﮐﺐ ﺳﮯ ﮨﮯ


Click to View the full poetry article at (fundayforum.com)

WaQaS DaR

I choose to love you in silence… For in silence I find no rejection, I choose to love you in loneliness… For in loneliness no one owns you but me, I choose to adore you from a distance… For distance will shield me from pain, I choose to kiss you in the wind… For the wind is gentler than my lips, I choose to hold you in my dreams… For in my dreams, you have no end. ― Rumi ❤


Click to View the full poetry article at (fundayforum.com)

WaQaS DaR

Stay❤

Stay Don't go away. Stay For one more day. Stay Forever with me. Stay Just a little longer, maybe? Stay For I feel alone When you're gone. Stay For the vacuum Created by your absence, Can be filled By no one. Stay For you Make me smile, And my smile Makes you giddy. Stay For we're perfect With our imperfections. Stay For you make me feel Safer than I've ever felt. Stay I want to say today Like everytime I want to, When I see you leave And board that flight. Stay Is the only word I promised myself Won't leave My lips today. For today, Is your day To take a step Towards A brighter day. So today, My love, Fly And soar high, For your eyes glow When you dream And you sparkle When you bring them to life. Jump, And take a leap For I believe in you, More than I do In myself. I can't commit On you landing safely But, I know that No matter what You'll get up And fight stronger Than ever before. Honey, So today, I ask you To take a leave. Go board that plane And fly away. Come here, And give me a hug Let me kiss you A happy good-bye, And tell you that "We" Are not as temporary As these good-byes. ~Anshika


Click to View the full poetry article at (fundayforum.com)

WaQaS DaR

Message for PTI ہر اِک دے نال پنگا اوہدا ، ہر اِک نال لڑائی اے وطن میرے دی عزت غیرت دھرنیاں وچ نچائی اے اَہی پی ٹی آئی اے ، بس اَہی پی ٹی آئی اے شرم حیا دئیاں ساریاں کندھاں چھالاں مار کے ٹَپی اوئے نت سن لو لیڈر اوہدا سب توں وادہ کھپتی دو ، تِن سگڑیٹ کوکین دے پی کے ہو جاندا شدائی اے اَہی پی ٹی آئی اے ، بس اَہی پی ٹی آئی اے سچ تے اپ منا لیندا اے ، چوٹھ کدئے نہ مناں جتھے جا کے متھا ٹیکیا ، اوتھے ہی لائیاں سناں ؟ اوہی گھر دی مالک بن گئی جو بچیاں دی تائی اے اَہی پی ٹی آئی اے ، بس اَہی پی ٹی آئی اے گھر سادا پنجاب دوستو کسے نوں کھون نہیں دینا مج تے رہ گئی اک پاسے اَسی کٹا جون نہیں دینا اسی پاک وطن دی اے دھرتی لہو دے کے سجائی اے اتھے نوں لیگ نے آنا اے ، اتھے نون لیگ ہی آئی اے


Click to View the full poetry article at (fundayforum.com)

Sign in to follow this  
Followers 0